ہائی بلڈ پریشر، ٹینشن اور ذیابطیس کا علاج گھر میں رہنے سے ممکن ہے۔۔۔۔۔ماہرین

طبی ماہرین نے جرنل سرکولیشن میں شائع ایک تحقیق میں واضح کیا ہے کہ:
دنیا بھر کے۹۱ فیصد افراد ہائی بلڈ پریشر اور ٹینشن کی بیماریوں میں مبتلا ہیں، جن میں صرف بڑے ادھیڑ عمر کے افراد ہی نہیں ہیں بلکہ بچے بھی موجود ہیں۔
اور اس ہائی بلڈ پریشر اور ٹینشن کی بڑی وجہ آبادیوں میں فضائی آلودگی کا بڑھنا اور لوگوں کا گھروں سے باہر رہنا ہے۔

ہانگ کانگ کے اسکول آف ہیلتھ کلب کے مطابق: "جسمانی طور پر سرگرم رہنا یا ورزش اور کم فضائی آلودگی کا امتزاج ہائی بلڈ پریشر کا خطرہ کم کرتا ہے، مگرجسمانی سرگرمیاں چاہے آلودہ فضا میں ہی کیوں نہ ہوں، ہائی بلڈ پریشر کی روک تھام کے لیے ایک اہم حکمت عملی ہے۔”

ساتھ ہی انھوں نے مذید بتایا کہ:
جسمانی طور پر زیادہ متحرک افراد میں ہائی بلڈ پریشر کی بیماری کا خطرہ کم ہوتا ہے.

درمیانی عمر میں جتنا زیادہ پیدل چلیں گے اتنا ہی ذیابیطس، ٹینشن اور ہائی بلڈ پریشر کا خطرہ کم ہوگا اور موٹاپے کا امکان بھی 61 فیصد تک کم ہوجاتا ہے۔

چہل قدمی سے خواتین میں نہ صرف ذیابیطس اور ہائی بلڈ پریشر کا خطرہ کم ہوتا ہے بلکہ موٹاپے کا امکان بھی 61 فیصد تک کم ہوجاتا ہے۔

دوستوں کے ساتھ شیئر کریں

ثناء مریم

ثناء مریم ماسکمیونیکیشن میں بیچلرز ہونرز کر رہی ہیں. نیوز ویبسائٹز اور اخبارات کیلیے نیوز رائیٹنگ اور رپورٹنگ کر چکی ہیں. آرٹیکل رائیٹنگ میں بھی دلچسپی رکھتی ہیں اور مختلف اخبارات کے لیے آرِیکلز لکھتی بھی رہی ہیں.حالات و واقعات کو قلم بند کرنے کا ہنر رکھتے ہوئے اس ہی شعبے کو اپنائے رکھنا چاہتی ہیں.

متعلقہ پوسٹ

Leave a Reply

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔