عمر شریف کی موت کیسے ہوئی؟ ڈاکٹر طارق شہاب نے حقیقت بتادی

کامیڈی کنگ عمر شریف کی موت کسی سانحے سے کم نہیں ہے اور یہ حقیقت قبول کرنا ہر انسان کے لئے شاید مشکل ہی ہے، کیونکہ عمر شریف ایسے انسان تھے، جو سب کے چہروں پر خوشیاں بکھیرتے تھے اور سب کو خوش رکھنے کا فن قدرت نے انہیں دے رکھا تھا۔

آج ان کی موت کے بعد جہاں پوری دنیا میں صفِ ماتم بچھ گئی ہے، وہیں اداکارہ ریما کے شوہر ڈاکٹر طارق شہاب جنہوں نے عمر شریف کا علاج کرنے کے لئے انہیں امریکہ بلوانے کے انتظامات کئے تھے وہ ان کی موت کے حوالے سے حقیقت بتاتے ہوئے کہتے ہیں کہ:

”عمر شریف اب ہم میں نہیں رہے یہ بات کرتے ہوئے دکھ ہو رہا ہے، افسوس ہو رہا ہے کہ جن کے علاج کے لئے حکومتِ پاکستان اور حکومتِ سندھ نے اپنی جانب سے ہر طرح کی ممکنہ کوشش کی کہ ان کو دوبارہ اپنے پیروں پر چلتا پھرتا دیکھا جائے، وہ صحتیاب ہوجائیں مگر وہ امریکہ پہنچنے سے قبل ہی دنیا سے رخصت ہوگئے۔ آج ان کا ڈائیلاسز ہوا اور وہ بالکل ٹھیک تھے، لیکن 4 گھنٹے بعد ان کو دل کا دورہ پڑ گیا۔ جس کے بعد ہر طرح کی ادویات دی گئیں، جرمنی کے ڈاکٹروں نے بہت محنت کی کہ ان کو بچایا جا سکے، لیکن اب ان کا آخری وقت آچکا تھا، دل کا دورہ پڑنے سے عمر اس دنیا سے رخصت ہوگئے۔“

واضح رہے کہ ایئر ایمبولینس میں پاکستان سے امریکہ جاتے وقت ان کی طبیعت خراب ہوئی، بخار اور سانس لینے میں تکلیف ہوئی جس کے بعد ان کو جرمنی کے ہسپتال میں فوری داخل کروایا گیا، جہاں یہ ٹھیک ہوگئے تھے، مگر جمعرات کو ان کو نمونیہ کی شکایت ہوگئی تھی اور گردے خراب ہونے کی وجہ سے جمعے کے روز ان کا جرمنی میں ہی ڈائیلاسز ہوا، جس کے ٹھیک 4 گھنٹے بعد یہ دل کا دورہ پڑنے سے جانبر نہ ہوسکے۔

دوستوں کے ساتھ شیئر کریں

اقراء ضیاء

http://1minutenews.pk

متعلقہ پوسٹ