برطانیہ جانے والوں کے لیے اچھی خبر

پاکستان کی سفارتی محاذ پر بڑی کامیابی برطانیہ نے پاکستان کو کورونا کے دوران سفر کے لیے خطرناک سمجھے جانے والے ممالک کی ریڈ لسٹ سے خارج کردیا۔ پاکستان اور ترکی سمیت 8 ممالک ہیں جنہیں ریڈ لسٹ سے نکالا گیا ہے۔

سفری پابندیوں میں نرمی کا اطلاق بدھ 22 ستمبر کو پاکستانی وقت کے مطابق صبح 8 بجے سے ہوگا نرمی کا مطلب ہے پاکستان سے برطانیہ جانے والوں کو اب ہوٹل میں قرنطینہ نہیں کرنا ہوگا برطانوی وزیر ٹرانسپورٹ نے کہا ہے کہ ریڈ لسٹ سے نکلنے کی وجہ سے مسافر سیاحتی ویزے پر بھی برطانیہ آسکتے ہیں۔

یاد رہے برطانوی حکومت نے دو اپریل کو پاکستان میں کورونا کے بڑھتے ہوئے مریضوں کے باعث اپنے ملک کے لیے سفری پابندیوں کا اعلان کیا تھا ، جس کا اطلاق 9 اپریل سے ہوا تھا۔

پاکستان میں برطانوی ہائی کمشنر کرسٹن ٹرنر نے اپنے ٹوئٹ میں کہا کہ خوشی کے ساتھ اس بات کی تصدیق کرتا ہوں کہ پاکستان اب ریڈ لسٹ میں نہیں رہا، جانتا ہوں گزشتہ 5 ماہ پاکستان کے لیے کتنے مشکل تھے ہائی کمشنر نے اس تمام عرصے میں تعاون کرنے پر این سی او سی سربراہ اسد عمر سمیت پاکستانی اور برطانوی صحتِ حکام کا شکریہ ادا کیا۔برطانوی ہائی کمشنر کا مزید کہنا تھا کہ 4 اکتوبر سے ریڈ, امبر، اور گرین لسٹ ختم کر دی جائیں گی۔

برطانیہ میں پاکستان کے سفیر معظم خان نے کہا کہ الحمدللہ، پاکستان برطانوی سفری ریڈ لسٹ سے نکل آیا۔
دونوں اطراف کی قیادت، پارلیمنٹیرینز اور تکنیکی ماہرین کی کاوشوں کا شکریہ ادا کیا، ان کا مزید کہنا تھا کہ دونوں ملکوں کے خاندانوں اور طلبہ کا مشکل وقت ختم ہو گیا ہے۔

وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی کہتے ہیں کہ پاکستان نے کورونا سے متعلق سائنسی بنیادوں پر اعدادو شمار پیش کیے، جس کی بنیاد پر برطانوی حکومت پاکستان کا نام ریڈ لسٹ سے نکا لنے پر مجبور ہو گئی، وزیر خارجہ نے تمام پاکستانیوں کو ریڈ لسٹ سے نکالے جانے پر مبارکباد بھی پیش کی۔

پاکستانیوں کے ساتھ ساتھ برطانوی سیاستدانوں نے بھی ریڈ لسٹ پابندیوں کے خاتمے کو خوش آئن قرار دیا ہے۔

ریڈ لسٹ پابندیوں کے خاتمے کے بعد پی آئی اے 22 تاریخ کے بعد سے مینچیسٹر اور لندن کے لیے اسلام آباد سے خصوصی چارٹرڈ پروازیں آپریٹ کرے گی۔

دوستوں کے ساتھ شیئر کریں

اقراء ضیاء

http://1minutenews.pk

متعلقہ پوسٹ